چین میں الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت میں 160 فیصد اضافہ

چین میں الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت میں 160 فیصد اضافہ
چین میں الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت میں 160 فیصد اضافہ
سبسکرائب کریں  


چین میں "نیو انرجی وہیکلز" کہلانے والی ریچارج ایبل، بیٹری، ہائبرڈ اور فیول سیل الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت 2021 میں 160 فیصد سالانہ اضافے کے ساتھ 3 ملین 520 ہزار تک پہنچ گئی۔

شنہوا ایجنسی کی خبر کے مطابق چائنا آٹوموبائل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (CAAM) کے اعداد و شمار کی بنیاد پر چین مسلسل 7 سالوں سے الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت میں دنیا میں پہلے نمبر پر ہے۔

الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت میں سال بہ سال 160 فیصد اضافہ ہوا، جبکہ کل فروخت میں اس کا حصہ 13.4 فیصد تک بڑھ گیا۔

الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت کل گاڑیوں کی فروخت کے 20 فیصد تک پہنچنے کا ہدف ہے۔

چین کی جانب سے الیکٹرک گاڑیوں کے بنیادی ڈھانچے کو سپورٹ کرنے والی سرمایہ کاری میں اضافہ بھی فروخت میں اضافے میں مؤثر رہا۔ 2021 کے آخر تک چین میں 75 ہزار چارجنگ اسٹیشن، 2 لاکھ 620 ہزار چارجرز اور 1298 بیٹری تبدیل کرنے والے اسٹیشنز نصب کیے جا چکے ہیں۔

جبکہ ملکی اور غیر ملکی آٹو موٹیو کمپنیوں نے 2021 میں عالمی چپ کی سپلائی میں کمی کی وجہ سے اپنی الیکٹرک گاڑیوں کی پیداوار میں کمی کر دی، چپ کی کمی میں نرمی کے ساتھ 2022 میں پیداوار اور فروخت میں اضافہ متوقع ہے۔

2020 میں تیار کردہ 5 سالہ سیکٹرل ڈویلپمنٹ پلان کے مطابق، اس کا مقصد ہے کہ چین میں الیکٹرک گاڑیوں کی فروخت 2025 تک موٹر گاڑیوں کی کل فروخت کے 20 فیصد تک پہنچ جائے گی۔

تبصرہ کرنے والے سب سے پہلے رہیں

Yorumlar